صحت

دنیا کی مہنگی ترین دوائی جس کی ایک وقت کی خوراک کی قیمت 20 لاکھ ڈالر ہے۔

zolgensma

سوئٹزرلینڈ ( ویب  ڈیسک )قیمتی ترین چیزوں سے بھی قیمتی ایک ایسی دوائی جس کی ایک خوراک کی قیمت 20 لاکھ ڈالر سے بھی زیادہ ہے اور پاکستانی کرنسی میں اس کی قیمت تقریباً 30 کروڑ سے بھی زیادہ بنتی ہے۔

 نوارٹس کمپنی کی تیار کردہ اس دوائی کا نام  زولجینسما ہے کیوں کہ ایک خاص قسم  کی  بیماری  ;اسپائنل مسکیولر ایٹروفی;( ایس ایم اے ) کے علاج کے لئے ہے۔ امریکہ میں ہر سال 400 سے زائد بچے اس بیماری کے ساتھ پیدا ہوتے ہیں۔ دو سال سے کم عمر بچے کو اس دوائی کی خوراک ایک گھنٹے تک بچے کے جسم میں داخل کی جاتی ہے کمپنی کا کہنا ہے کہ یہ دوا ئی اگلے مہینے کے ابتداء میں فروخت کے لئے مارکیٹ میں پیش کی جاسکے گی جبکہ امریکی ادویاتی ادارےاس دوائی  کی منظوری بھی دے چکے ہیں۔

 جین تھراپی پر مبنی یہ دوائی موروثی  بیماری ’اسپائنل مسکیولر ایٹروفی‘ ( ایس ایم اے ) کا مکمل علاج ہے خراب جین کی وجہ سے یہ بیماری بچے پر اثر انداز ہوتی ہے جس سے عضلات اور پٹھے کمزور ہو جاتے ہیں  اوربچہ سانس لینے اور کھانے پینے  تک  کو محتاج ہو جاتا ہے۔ اس بیماری کی تین اقسام ہیں اور یہ دوائی ان تینوں کا مستقل علاج ہے کمپنی کے مطابق دوائی کی قیمت پانچ سال کے اندر قسطوں کی صورت میں بھی ادا کی جا سکتی ہے

اس بیماری کی ایک دوا اسپنرازا ہے جسے بایوجین نامی کمپنی نے تیا ر کیا ہے ۔ پہلے مرحلے میں ایک سال میں اس کے لیے 7 لاکھ پچاس ہزار ڈالر ادا کرنا ہوں گے جبکہ اگلے ہر سال ساڑھے تین لاکھ ڈالر ادا کر ناپڑیں گے۔ اسپائنل مسکیولر ایٹروفی مرض میں متاثرہ جین ریڑھ کی ہڈی پر حملہ آور ہوتا ہے اور 90 فیصد اس بیماری  سے متاثر ہ   بچے دو سال کے اندر ہی وفات  پا جاتے ہیں جبکہ کم شدت  بیما ری میں مبتلا ہونے والے بچے آہستہ آہستہ متاثر ہوتے ہیں اور کئی عشروں تک اپاہج اورمفلوج  ہوکر زندگی گزارتے ہیں۔ زولجینسما دوا میں اس جین کی صحت مند کاپی موجود ہے جو بچے کے جسم کے اندر جاکر اسے اس جان لیوا بیماری   سے  نجا   ت  دلاتی  ہے۔

To Top