رحیم یار خان

شیخ زید ہسپتال کے ایمرجنسی وارڈ میں ڈیوٹی کے دوران لیڈی ڈاکٹرسے مبینہ زیادتی کی کوشش۔


شیخ زید ہسپتال کے ایمرجنسی وارڈ میں پرائیویٹ سنٹری ورکر جانب سے ڈیوٹی کے دوران لیڈی ڈاکٹرسے مبینہ زیادتی کی کوشش۔


 رحیمیارخان( ویب ڈیسک )‏ شیخ زید ہسپتال ;رحیم یار خان; کے ایمرجنسی وارڈ میں ڈیوٹی کے دوران آرام کرنے میں مصروف; لیڈی ڈاکٹر; پر اوباش سینٹری ورکر کا مبینہ طور پر مجرمانہ حملہ، زیادتی کی کوشش; ڈاکٹر ;کے واویلا کرنے پر ڈیوٹی پر موجود سکیورٹی گارڈز نے سینٹری ورکرکو کورنگے ہاتھوں پکڑلیا۔

 تفصیلات کے مطابق مورخہ  18 ستمبر 2018  کو ;نائٹ ڈیوٹی; پر تعینات شیخ زید ہسپتال کے ایمرجنسی وارڈ میں ؛لیڈی ڈاکٹر؛  آفس کی کنڈی لگا کر آرام کر رہی تھی۔ اسی دوران ڈیوٹی پر تعینات پرائیویٹ؛ سنٹری ورکر؛ علی حسن موقع پا کر اندر داخل ہوگیا ،اور آرام کرنے میں مصروف؛ لیڈی ڈاکٹر؛ پر مجرمانہ حملہ کرتے ہوئے مبینہ طور پر زیادتی کی کوشش کی۔

لیڈی ڈاکٹر کے شور مچانے پر ڈیوٹی پر موجود ;سکیورٹی گارڈ ;موقع پر پہنچ گئے اور انہوں نے اوباش سنٹری ورکر ؛علی حسن ؛کو رنگے ہاتھوں پکڑ لیا ۔جسے بعد ازاں کاروائی کیلئے؛ پولیس؛ کے حوالے کر دیا گیا۔ واقعہ کی اطلاع پر; پرنسپل شیخ زید; کالج و ہسپتال ڈاکٹر ;مبارک علی; نے نوٹس لیتے ہوئے ایمرجنسی وارڈ میں ڈیوٹی پر تعینات؛ ڈی ایم ایس؛ ڈاکٹر مشتاق احمد کو معطل کردیا ۔

ینگ ڈاکٹرز

تاہم واقعے کی اطلاع پر؛ ینگ ڈاکٹرز؛نے احتجاج کیا اور ہڑتال کی;ینگ ڈاکٹرز;  کا مطالبہ تھا کہ ڈاکٹر کے لیئے الگ آفس فراہم  کیا جائے، اور شیخ زید کی ایمر جنسی وارڈ کی; کینٹین;کے لئے بھی الگ جگہ فراہم کی جائے، کیونکہ مشترکہ کینٹین ہونے پر لیڈی ڈاکٹرز پرہر وقت فقرے کسےجانا معمول بن گیا ہے۔

تاہم اسی دوران گرفتار ملزم  کے مقدمہ کے اندراج کیلئے تحریری شکایات پر تاخیر کیے جانے پر ینگ ڈاکٹرزنےہڑتال کی دھمکی دی تھی ۔

 انچارج سیکورٹی ;شیخ زید ہسپتال; ڈاکٹر انوارنے فوکل پرسن شیخ زید ہسپتال ;محمدالیاس; کے ہمراہ پولیس کو کارروائی کیلئے تحریری شکایات دے دی;جس پر پولیس نے گرفتار سینٹری ورکر ملزم ؛علی حسن؛ کے خلاف مقدمہ درج کرکے کاروائی شروع کردی۔


Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

To Top