رحیم یار خان

پاکستان پیپلز پارٹی نے بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے تحت نئے کارڈ جاری کرانے کا لالچ دے کر خواتین سے شناختی کارڈ اکٹھے کرنا شروع کر دئیے


رحیم یارخان( ویب ڈیسک ) ڈسٹرکٹ نیوزپیپر رپورٹ کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی نے بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے تحت نئے کارڈ جاری کرنے کے بہانہ پر شہر بھر کی خواتین سے شناختی کارڈاور ان کے خاندان کی معلومات کرنا شروع کر دی ہے۔


تفصیل کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی نے خواتین سے بینظیرانکم سپورٹ کارڈ کے نام پر فارم وصول کرنے شروع کر دیے ہیں، اور کارڈ میں ماہانہ دس ہزار روپے رقم ملنے کا جھانسہ دیا جارہا ہے، کارڈ کے بدلے میں ووٹ دینے کے لیے مجبور کیا جا رہا ،جو کہ الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی ہے، خواتین کو کارڈ میں 10000 روپے ملنے کا لالچ دے کر، چند مخصوص عناصر غریب خواتین کو اپنا حق رائے دہی استعمال کرنے میں آزادی کے بجائے، لالچ دے کر ووٹ دینے پر مجبور کر رہے ہیں۔


بے نظیر سکول کے نام سے تھلی چوک پر منعقدہ کیمپ میں کئی دنوں سے یہ کام جاری ہے، ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ یہ کیمپ 25 جولائی تک جاری رہے گا، اور خواتین سے ان کے شناختی کارڈ اور بے نظیر کارڈ فراہم کرنے کے نام پر ،انہیں اکٹھا کرکے مجبور کیا جارہا ہے کہ وہ مہانہ 10000روپے رقم لینے کے لیے 25 جولائی کو پیپلز پارٹی کو ووٹ دیں، اور 25 جولائی کے بعد کارڈ فراہم کر دیے جائیں گے ۔ 

تاہم بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کے ذرائع کے مطابق ایسا کوئی پروگرام لانچ نہیں کیا گیا- اور الیکشن کمیشن کے مطابق بھی عوام کو لالچ دے کر ووٹ کیلئے مجبور کرنا ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کے مترادف ہے ۔

Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

To Top