رحیم یار خان

4افراد کے قتل اور 8 افراد کے زخمی ہونے پر، پولیس کے افسران کا احاطہ عدالت کاہنگامی دورہ ، رحیم یارخان کی ایک ایسی شخصیت کے خلاف کارروائی کاحکم جس کے بارےجان کر آپ حیران رہ جائیں گے

ryk police-image

رحیم یار خان (ویب ڈیسک) چار افراد کے قتل کئے جانے، اور 8 افراد کے زخمی ہونے پر، پولیس کے اعلیٰ افسران کا احاطہ عدالت کاہنگامی دورہ ،سکیورٹی انتظام ناقص ،سی سی ٹی وی کیمرے بھی ناکارہ نکلے، عدالت جانے کے دوران فائرنگ کے نتیجے میں، 4 افراد کے قتل کئے جانے، اور 8 افراد کے زخمی ہونے پر، پولیس کے اعلیٰ افسران کا احاطہ عدالت کادورہ عدالت میں لگائےگئے ،17سی سی ٹی وی کیمرے ناکارہ نکلے ،اور دیگر سکیورٹی انتظامات بھی نا قص پائے گئے۔


انتظامات کو بہتر بنانے کے لیے ،فوری اقدامات کرنے کا فیصلہ ،سائیکل سٹینڈ ٹھیکیدار کی سخت الفاظ میں سرزنش، سائیکل سٹینڈ سے ہٹ کرگاڑیاں اور موٹر سائیکل کھڑی کرنے پر ٹھیکیدار کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لانے کا فیصلہ، احاطہ عدالت میں تعینات کیے جانے والے سکیورٹی اہلکاروں کو وکلاء کے علاوہ داخل ہونے والے ہر فرد کی تلاشی لینے کی ہدایت۔


جنرل سکریٹری ڈسٹرکٹ بار کا پولیس کی جانب سے کیے جانے والے سکیورٹی انتظامات کا خیرمقدم ،گزشتہ روز مورخہ 6 جولائی 2018 بروز جمعہ پیشی پر عدالت جانے والے افراد کو فائرنگ کر کے قتل کرنے اور 8 افراد کو زخمی کیئےجانےپر ،ڈی ایس پی سٹی سرکل، جمشید علی شاہ کا احاطہ عدالت کادورہ ، عدالت میں کیے جانے والے ،سکیورٹی انتظامات پر عدم اطمینان کا اظہار، دورے کے دوران انکشاف ہوا کہ احاطہ، عدالت میں لگائے گئے سی سی ٹی وی کیمرے ،جن کی تعداد 17 بتائی جاتی ہے ناکارہ ہیں،۔ 

یہ بھی پڑھیئے : رحیم یار خان دیرینہ دشمنی کا واقعہ لاشوں کے ڈھیر لگ گئے۔


ڈی ایس پی سٹی سرکل، جمشید علی شاہ نے ٹھیکیدار سائیکل سٹینڈ کوطلب کرکے سخت الفاظوں میں سرزنش کی ۔تاہم ڈی ایس پی سی پی سٹی نے سکریٹری ڈسٹرکٹ بار سے کہاکہ سکیورٹی کے لیے نصب کیے جانے والے سی سی ٹی وی کیمروں کوٹھیک کیا جائے یا پھر نئے سی سی ٹی وی کیمرےلگائے جائیں ،تاکہ وہ کلا اور ججز کو مکمل سکیورٹی فراہم کی جا سکے۔

Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

اوپر